رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

وٹامنز سے بھرپور خربوزے کے حیران کن فوائد

ایک صحت مند سحری کا بنیادی اصول یہ ہے کہ سحری کے وقت بہت زیادہ کھانے سے گریز کریں اور نہ اتنا زیادہ پانی پینا چاہیے کہ معدے پر بوجھ پڑے اور آپ دن بھر پریشان رہیں بلکہ صحت مند سحری کا مطلب ایسی غذا لینا ہے جو روزے کی حالت میں آپ کو دن بھر توانائی اور طاقت فراہم کرے تا کہ آپ اپنے روز مرہ کے کاموں کو توانائی اور قوت کے ساتھ انجام دے سکیں۔

آپ سحری میں جو کچھ کھاتے ہیں وہ آپ کو باقی دن کے لیے تیار کرتا ہے اور صبح کا اچھا کھانا انتخاب کرنے سے آپ کی توانائی کی سطح پر اچھا فرق ڈالتی ہے جس سے خون میں شوگر کے گرنے، توانائی کے پسماندگی، موڈ میں تبدیلیاں اور سر درد سے بچنے میں مدد مل سکتی ہے۔ سحری میں متعدد کھانے استعمال کرنے چاہیے جو آپ کو دن بھر کی توانائی دے سکے۔

۔1 پروٹین والی غذائیں کھائیں

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

پروٹین ہضم ہونے میں وقت لیتا ہے جب کہ اس کے استعمال سے تا دیر بھوک نہیں لگتی، پروٹین سے بھرپور غذاؤں کو رمضان میں بہترین غذائیں سمجھا جاتا ہے۔

غذائی ماہرین کے مطابق بہت زیادہ پروٹین کی مقدار بھی صحت کے لیے مضر صحت ہےاس لیے پروٹین والی غذاؤں کے ساتھ ساتھ کاربوہائیڈریٹس اور فایبر کی مقدار لینا بہت ضروری ہے۔ پروٹین سے بھرپور غذاؤں میں انڈے، دلیا، چکن اور مچھلی شامل ہیں۔

۔2 دہی اور دودھ کا استعمال کریں

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

سحری ومیں دہی کا استعمال کرنے سے معدے کو فائدہ  پہنچتا ہے، اس کے علاوہ گرمی کے روزوں میں دہی کا استعمال صحت کے لیے نہایت مفید ہے۔

سحری کے دوران ایک یا دو گلاس پانی پی لیں اور جب آپ اپنا کھانا ختم کر چکیں تو اس کے کم از کم دس منٹ بعد ایک یا آدھا گلاس دودھ پی لیں اور اس بات کو بھی یقینی بنائیں کہ دودھ کو روزانہ پینا ہے، کیونکہ ایک گلاس دودھ میں کیلشیم اور وٹامن ڈی کا بہت بڑا ذخیرہ ہوتا ہے جو دن بھر آپ کو چست اور توانا رکھنے میں مدد دیتا ہے۔

۔3 پھل کھانے کو ترجیح دیں

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

ہم آپ کو ایک ایسے پھل کے بارے میں بتاتے ہیں جو دنیا کے ہر خطے میں پایا جاتا ہے وہ سیب ہے۔ سیب توانائی اور صحت بخش اجزا سے بھرپور ہے اور یہ بازار میں باآسانی سے دستیاب بھی ہے۔ ایک سیب کے اندر بڑی مقدار میں فائبر، وٹامن سی، پوٹاشیم، وٹامن ای اور آئرن پایا جاتا ہے۔

سحری میں سیب کھانا بہت مفید ہے۔ اس کے علاوہ کیلا ایک زود ہضم پھل ہے جو بے پناہ توانائی سے بھرا ہوا ہے۔ سحری میں کیلا کھانے سے آپ دن بھر صحت مند اور توانا بھی رہیں گے۔ اگر آپ کیا نہ کھانا چاہیں تو اسے بلینڈ کر کے اسکا پیسٹ بنا لیں اور اسے ٹوسٹ پر لگا کر کھائیں۔

اس کے علاوہ انار بھی ایک بہترین پھل ہے جسے آپ سحری میں کھا سکتے ہیں۔ ایک انار میں بڑی مقدار میں وٹامن اے، سی اور ای بڑی مقدار میں پایا جاتا ہے۔ رمضان المبارک میں سب سے زیادہ سحری و افطار میں استعمال ہونے والا پھل خربوزہ ہے۔ خربوزے میں نوے فیصد پانی ہوتا ہے جو روزے کی حالت میں انسان کے جسم کو پانی کی کمی کا شکار ہونے سے بچاتا ہے۔

اس کے علاوہ تربوز بھی ایک ایسا پھل ہے جو آپ کے معدے کو درد اور تکلیف سے محفوظ رکھتا ہے اور گیس سے ہونے والے مسائل سے جنات دلاتا ہے۔ آپ چاہیں تو ان پھلوں کو الگ بھی کھا سکتے ہیں اور ان کو یکجا کر کے ان کی فروٹ سلاد بنا کر سحری میں کھا سکتے ہیں۔

 ۔4 چاول، روٹی، اور پراٹھے

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

چاولوں میں چونکہ کاربوہائیڈریٹس کا بڑا ذخیرہ ہوتا ہے اور وہ جلدی اور آسانی سے ہضم بھی ہو جاتے ہیں، اس لیے کوشیش کریں کہ سحری میں پلاؤ بنا لیں اور ان کے ساتھ چکن یا گوشت کا استعمال کریں ۔چاول کے علاوہ آپ سحری میں ڈبل روٹی، چپاتی یا پراٹھے بھی کھا سکتے ہیں۔

۔5 دالوں کا استعمال کریں

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

دالیں اپنے اندر توانائی کا بہت بڑا ذخیرہ رکھتی ہیں۔ کسی بھی دال میں ذرا سا مصالہ ملا کر پکا لیں تا کہ وہ کچھ لذیز بن جائے اور اسے ایک سادہ سی روٹی کے ساتھ کھائیں جو گھی کے بغیر بنی ہو۔

اگر آپ گھی استعمال کرنا چاہیں تو دیسی گھی کا استعمال بہتر رہے گا۔ دالوں میں پروٹین، وٹامنز اور فائیبر بڑی مقدار میں پایا جاتا ہے اور روزے میں آپ کو اتوانائی کی ضرورت پڑتی ہے جنہیں آپ دالوں سے بھی حاصل کر سکتے ہیں۔

۔6 خشک میوہ جات

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

خشک میوہ جات جیسے کھجور، بادام، کاجو اور اخروٹ کھانا صحت کے لیے فائدہ مند ہے۔

کھجور صحت کے لیے نہایت مفید ہے۔ اس میں آئرن، کیلشیم، شوگر اور کئی طرح کے دیگر وٹامنز پائے جاتے ہیں۔

آپ کھجور کو ایسے بھی کھا سکتے ہیں اور اس کو دیگر مشروبات میں ڈال کر بھی استعمال کر سکتے ہیں۔ آپ چاہیں تو سحری کے لیے کھجور اور کیلے کا مشروب بھی بنا سکتے ہیں، اس کے علاوہ چاکلیٹ اور کھجور کا مشروب بھی بنایا جاسکتا ہے، اس کے علاوہ اگر آپ فروٹ سلاد بھی بنائیں تو اس میں بھی کھجور کو ڈال کر ایک عمدہ ذائقہ حاصل کر سکتے ہیں۔

کھجور ایک ایسی غیر معمولی چیز ہے جس کے بغیر رمضان المبارک کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا۔ کھجور کا آپ کے دستر خواں پر ہونے سے نہ صرف آپ کے دستر خواں کی رونق بڑھتی ہے بلکہ اس سے آپ کے دستر خواں میں برکت بھی بڑھتی ہے۔ ایک کھجور میں 6 طرح کے وٹامنز اور 15 اقسام کے منرلز پائے جاتے ہیں۔

طبی ماہرین کے مطابق 8 سے 10 بادام روزانہ بھگو کر کھائیں تو زہنی صحت اچھی ہوتی ہے۔ اس میں پروٹین، فایبر، کیلشیم، آئرن، سلنیوم، زینک، وٹامن بی اور فولٹ پائے جاتے ہیں۔ بادام افسردگی اور تناؤ کو کم کرنے اور خلیوں کو نقصان سے بچانے میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔ سحری کے وقت بہت زیادہ نہیں کھانا چاہیے تا کہ آپ کے بدن کو توانائی ملے اور بھوک کا احساس بھی نہ ستائے۔

اگر آپ سحری میں مٹھی بھر بادام کھا لیں تو یہ آپ کو توانائی کا ایک بڑا ذخیرہ فراہم کریں گے اور آپ کا روزہ بہت اچھا گزرے گا۔

۔7 پانی پینا نہ بھولیں

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

سحری میں پانی پینا بہت ضروری ہے کیونکہ آپ پورا دن روزہ رکھیں گے۔ اگر آپ تھیک مقدار میں پانی پیتے ہیں تو آپ کو روزے کے دوران اتنی زیادہ پیاس، کمزوری یا پانی کی کمی محسوس نہیں ہوگی۔ تاہم آپ کو ضرورت سے زیادہ پانی پینے سے بھی گریز کرنا چاہیے۔ سحری میں 2 گلاس پانی آپ کے جسم کے لیے کافی ہے۔

۔8 صحت بخش مشروبات

رمضان المبارک میں سحری کے وقت کیا کھانا اور پینا چاہیے؟

پانی کے علاوہ آپ ملک شیک، لسی یا لیموں پانی بھی پی سکتے ہیں۔ تاہم کوشش کریں کہ چائے اور کافی پینے سے گریز کریں یا ان کا استعمال کم کریں کیونکہ ان میں کیفین کی مقدار زیادہ ہوتی ہے جو آپ کو روزے کے دوران پیاس کا احساس دلاتی ہے۔

سحری کے دوران کیا کھانا چاہئیے اور کن چیزوں سے پرہیز کرنا چاہئیے اس کے بارے میں مزید جاننے کے لیے آپ اولا ڈاک کی مدد سے پاکستان میں کسی بھی ماہر غذائیت سے مشورہ کر سکتے ہیں۔ اپوائنٹمنٹ بک کرنے کے لیے اولا ڈاک ویب سائٹ یا موبائل ایپ استعمال کریں۔ 

You May Also Like

About the Author: Dr. Maliha Khan

Leave a Reply

Your email address will not be published.